67

مشاورتی اجلاس: نواز شریف کا آپریشن فیض آباد کی ناکامی پر برہمی کا اظہار

دھرنا ختم کرانے کے لیے کوئی حکمت عملی نظر کیوں نہ آئی، حکومت کو سبکی کاسامنا کرنا پڑا: سابق وزیراعظم کی پنجاب ہاؤس میں مشاورتی اجلاس میں گفتگو

اسلام آباد: پنجاب ہاؤس میں نواز شریف کی زیرصدارت پارٹی کا مشاورتی اجلاس جاری ہے۔ ذرائع کے مطابق اجلاس میں مریم نواز، وزیر داخلہ احسن اقبال، وزیر خارجہ خواجہ آصف، طلال چوہدری، دانیال عزیز، مریم اورنگزیب، آصف کرمانی، پرویز رشید، طارق فاطمی، عرفان صدیقی، امیر مقام، طارق فضل چودھری، مصدق ملک اور مائزہ حمید شریک ہیں۔

اجلاس میں ملک کی سیاسی صورتحال، حکومتی کارکردگی، زاہد حامد کے استعفے اور دھرنے کے بعد کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جائے گا، وزیر داخلہ احسن اقبال دھرنے اور مذاکراتی عمل پر بریفنگ دیں گے۔ اجلاس میں شریف فیملی کے خلاف زیر سماعت مقدمات، مسلم لیگ ن کی عوامی رابطہ مہم ، نئی حلقہ بندیوں سے متعلق آئینی ترمیم پر بھی مشاورت کی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں نواز شریف نے آپریشن فیض آباد کی ناکامی پر سخت برہمی کا اظہار کیا اور کہا دھرنا ختم کرانے میں سول انتطامیہ کی ناکامی افسوسناک ہے، دھرنا ختم کرانے کے لیے کوئی حکمت عملی نظر کیوں نہ آئی۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف کا کہنا تھا آپریشن کی ناکامی سے حکومت کو سبکی کا سامنا کرنا پڑا۔ وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا آپریشن انتطامیہ اور پولیس نے براہ راست عدالت کے حکم پر کیا، میں مذاکراتی عمل کو مزید وقت دینا چاہتا تھا۔ ذرائع کے مطابق احسن اقبال کا کہنا زاہد حامد کے معاملے پر پارلیمانی جماعتوں کا رویہ مایوس کن تھا۔

ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف نے احسن اقبال اور طلال چوہدری سے الگ الگ ملاقات کی اور دونوں سے دھرنے کے محرکات پر تبادلہ خیال کیا۔ نواز شریف نے احسن اقبال کو ہدایت دی کہ آپریشن کی ناکامی کے ذمہ داروں کا تعین کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں